فیورٹ پوسٹ

نواز شریف آج کابینہ اجلاس کی صدارت ویڈیو لنک کے ذریعے کریں گے

پاکستان کے وزیراعظم نواز شریف پیر کو ہونے والے وفاقی کابینہ اور قومی اقتصادی کونسل کے اجلاسوں کی صدارت لندن سے ویڈیو لنک کے ذریعے کریں گے۔
نواز شریف اس وقت لندن میں موجود ہیں جہاں منگل کو ان کی اوپن ہارٹ سرجری ہو گی۔
ریڈیو پاکستان کے مطابق پیر کو اسلام آباد میں وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوگا جس میں آئندہ مالی سال کے بجٹ پر غور کرنے کے بعد اس کی منظوری دی جائے گی۔
٭ ’وزیرِاعظم وزرا اور سرکاری افسران سے مسلسل رابطے میں ہیں‘
٭ نواز شریف علیل، آئندہ ہفتے لندن میں ہارٹ سرجری ہو گی
اس کے علاوہ قومی اقتصادی کونسل کا اجلاس بھی پیر کے روز ہی ہونا ہے جس میں مجوزہ سالانہ ترقیاتی منصوبے اور سرکاری شعبے کے ترقیاتی پروگرام کا جائزہ لیا جائے گا اور نواز شریف ان دونوں اجلاسوں کی صدارت لندن سے پاکستانی ہائی کمشن سے ویڈیو لنک کے ذریعے کریں گے۔
اس سے قبل بی بی سی سے بات کرتے ہوئے پاکستان کے وفاقی وزیرِ اطلاعات ونشریات پرویز رشید کا کہنا تھا کہ وزیرِاعظم نوازشریف دل کے آپریشن کے لیے لندن میں مقیم ہیں اور وہ لندن سے ہی امورِ مملکت بھی دیکھ رہے ہیں۔
وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ وزیرِاعظم کی معاونت کے لیے سرکاری افسران بھی لندن میں موجود ہیں۔
پرویز رشید کا کہنا تھا کہ منگل کو وزیرِاعظم کا بائی پاس ہوگا اور جیسے ہی ڈاکٹر ان کو اجازت دیں گے میاں نواز شریف پاکستان واپس چلے جائیں گے۔
خیال رہے کہ چند روز قبل ٹوئٹر پر مریم نواز کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کی سرجری منگل کو ہوگی جبکہ وہ ہسپتال میں تقریباً ایک ہفتہ قیام کریں گے۔
یہ نواز شریف کا لندن کا دوسرا دورہ ہے۔ اس سے قبل وہ گذشتہ ماہ بھی طبی معائنے کے سلسلے میں لندن گئے تھے۔
سرکاری طور پر تاحال یہ نہیں بتایا گیا کہ وزیرِ اعظم نواز شریف کی اوپن ہارٹ سرجری اور ان کی مکمل صحت یابی کے دوران امورِ حکومت کون چلائے گا؟
وزیراعظم نواز شریف کی سرجری کی خبر سامنے آتے ہی کئی سربراہان مملکت نے ان کے لیے نیک تمناؤں اور جلد صحتیابی کے لیے دعاؤں کا اظہار کیا۔
خبر رساص ادارے اے پی پی کے مطابق ان سربراہان مملکت میں انڈیا کے وزیر اعظم نریندر مودی اور افغان صدر اشرف غنی شامل ہیں۔