سوات انجمن کاکا خیل سیدان خیبر پختونخوا کے سرپرست اعلیٰ برسٹر فیروز شاہ کا کا خیل نے کہا ہے کہ ہماری تنظیم کے قیام کا مقصد کاکا خیل قوم کو ایک پلیٹ فارم پر متحد کرنا ہے جس کے لئے صوبہ بھر کے تمام اضلاع میں تنظیم سازی کریں گے ، شموزئی سوات میں انجمن کاکا خیل کوفعال بنانے میں میں سید فضل باقی کاکا خیل اہم کردار ادا کررہے ہیں ، 1981میں سید جمال شاہ کا کا خیل نے تنظیم کا جو پودا لگا یا ہے وہ آج سایہ دار درخت میں تبدیل ہوچکا ہے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے شموزئی سوات میں انجمن کاکا خیل کے صوبائی گرینڈ جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر جرگہ کے میزبان سید فضل باقی کاکا خیل ، سردار گل باچا ، مکمل شاہ ، جاوید شاہ باچا ، عدنان کاکا خیل ، ملک ظفر اور نعمان کاکا خیل سمیت صوبہ بھر سے آئے ہوئے مختلف اضلاع کے قائدین نے بھی خطاب کیا ، انہوں نے کہا کہ ہمارا اصل مقصد عوام کی بے لوث خدمت ہے اور ہم اللہ تعالیٰ کے رضا کے لئے فلاحی کاموں میں بڑ ھ چڑھ کر حصہ لے رہے ہیں ، پختونوں کے حجروں کو دوبارہ آباد کرنے اور جرگوں کا انعقاد کرنا ہماری ترجیحات میں شامل ہیں انہوں نے کہا کہ کاکا خیل قوم نے ملک کی تعمیر وترقی میں اہم کردار ادا کیا ہے اسلئے ہم اس تاریخی اور دینی و دنیاوی تعلیم سے آراستہ کاکا خیل قوم کو ایک پلیٹ فارم پر جمع کریں گے جس کے لئے تنظیم سازی اور ممبر سازی کا مرحلہ شروع کررہے ہیں ، تقریب کے آخر میں تنظیم کی کامیابی اور ملک وقوم کی سلامتی کے لئے خصوصی دعا کی گئی ۔

سوات کے رہائشی انگلینڈ کے نوجوانوں سوات کے عوام کے لئے انٹر نیشنل جد ہسپتال کا تحفہ دے دیا ، 12گھنٹے فری اور او پی ڈی سمیت ممتاز ڈاکٹر عوام کے لئے دستیاب ہوں گے ، گذشتہ روز سوات کے رہائشی نوجوانوں جو کہ انگلینڈ میں رہائش پذیر ہے نے سوات میں انٹر نیشنل معیار کے جدید ہسپتال رائل ایمپرئیل ہسپتال کا تحفہ دیا ، اس موقع پر مکان باغ میں ایک پروقار تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں سابق صوبائی وزیر حسین احمد کانجو ، سوات ٹریڈرز فیدریشن کے صدر عبدالرحیم ،سوات پریس کلب کے صدر شہزاد عالم اور سینئر صحافی غلام فاروق نے خصو صی طور پر شرکت کی ، تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا حکومت کی ذمہ داری میں عوام کو صحت کے سہولیات بھی فراہم کرنا ہے لیکن حکومت کی عدم توجہ سے سوات کے عوام صحت کے سہولیات کے لئے دردر کی ٹوکریں کھانے پر مجبور ہیں اور اس کو دیکھتے ہوئے رائیل ایمپرئیل ہسپتال کے ڈائریکٹر جاوید اقبال نے یہاں کے عوام کو کم ریٹ پر صحت کے معیاری سہولیات دینے کا عزم کیااور آج انہوں نے سوات میں بین الاقوامی معیار کے ایک ایسے ہسپتال کا افتتاح کیا جس سے یہاں کے عوام کو اسلام آباد پشاور اور دیگر شہروں میں علاج کے لئے جانے سے چھٹکارا مل جائیگا ، اس موقع پر ہسپتال کے ڈائریکٹر جاوید اقبال نے کہا کہ ہمارا مقصد یہاں کے غریب عوام کو صحت کے معیاری سہولیات فراہم کرنا ہے ، اس ہسپتال میں دنیا کے معیاری ڈاکٹر علاج کے لئے موجود رہیں گے

سوات ڈپٹی کمشنر سوات عامر آفاق نے کہا ہے کہ ایک ارب روپے کی لاگت سے مینگورہ بیوٹیفیکیشن منصوبے پر تیزی سے کام جاری ہے ، اس اہم منصوبے کو معیار ی میٹرئیل کے ساتھ ہر حال میں مقررہ مدت تک پایہ تکمیل تک پہنچایا جائیگا ، معاشرے کے اصلاح میں میڈیا کا کردار نہایت اہم ہے ، صحافی مثبت رپورٹنگ کرکے عوامی مسائل کے حل میں ہمارے تعاون کریں ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے سوات پریس کلب میں میٹ دی پریس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر اے ڈی سی سوات محمد طاہر خان اور اے سی شہاب محمد بھی موجود تھے ، سوا ت پریس کلب کے صدر شہزاد عالم نے ڈپٹی کمشنر سوات عامر آفاق کو خوش آمدید کہا اور انہیں صحافیوں کے مسائل سے اگاہ کیا ، ڈی سی سوات نے کہا کہ مینگورہ بیوٹیفیکیشن کے سکیم میں سوات پریس کلب کو بھی شامل کریں گے ، انہوں نے کہا کہ سوات میں ناقص اشیاء خوردنوش اور گراں فروشی کسی بھی صورت برداشت نہیں کی جائیگی اور اس سلسلے میں ہماری عملی کوششیں جاری ہیں ، عوام کو ملاوٹ سے پاک دودھ کی فراہمی کیلئے بھی حکمت عملی وضع کرلی ہے ، ضلعی انتظامیہ کی کوشش ہے کہ ڈیوٹی ایمانداری سے سرانجام دیکر عوام سے زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کریں ، بعد ازا ڈی سی سوات نے سوات پریس کے ہالز اور کمروں کا معائنہ کیا ۔ 
               
                                                                                                                                                  
                        پشاورعوامی نیشنل پارٹی کو    (4   -  NA    ) کے  علاقے بڈھ بیرمیں بڑادھچکا ، کئی سنیئر رہنما مسلم لیگ ن میں شامل، تفصیلات کے مطابق اے این پی سے تعلق رکھنے والے جہانگیر خان، حنیف اللہ اور رحمت اللہ نےNA-4میں ایک بڑے شمولیتی جلسے میں اپنی پارٹی چھوڑ کر پاکستان مسلم لیگ (ن) میں شمولیت کا اعلان کردیا ۔ اس موقع پر پی ایم ایل (ن) کے صوبائی سیکرٹری انفارمیشن ناصر موسیٰ زئی نے ایک بڑے عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ NA-4 میں اُنکی پارٹی کے خدمات کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ۔ انھوں نے کہا کہ ہم حلقے کے منتخب نمائندے نہ ہونے کے باوجود بھی ہر شعبے میں NA-4کے لئے کام کر رہے ہیں اور اس علاقے میں بجلی اور گیس کے شعبے میں ترقیاتی منصوبوں کے جال بچھا دیئے ہیں۔ ناصر موسیٰ زئی نے مزید کہا کہ منتخب نمائندے NA-4کے عوام کی خدمت میں مکمل طور پر ناکام ہے یہی وجہ ہے کہ دوسرے پارٹیوں سے سیاسی ورکرز جوق درجوق پاکستان مسلم لیگ (ن) میں شامل ہورہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اگلا الیکشن پاکستان مسلم لیگ ن کا ہے اور عوام ہمیں بھاری اکثریت ست کامیاب کریگی۔اس موقع پر جہانگیر خان، حنیف اللہ اور رحمت اللہ نے بھی مسلم لیگ ن میں شمولیت کا اعلان کیا اور جلسے سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ NA-4 میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے عوامی خدمت کی بدولت حلقے میں مسائل دن بہ دن کم ہو رہے ہیں جس کی وجہ سے مسلم لیگ ن حلقے کی مقبول ترین جماعت بن چکی ہے۔ پشاورعوامی نیشنل پارٹی کے علاقے بڈھ بیرمیں بڑادھچکا ، کئی سنیئر رہنما مسلم لیگ ن میں شامل، تفصیلات کے مطابق اے این پی سے تعلق رکھنے والے جہانگیر خان، حنیف اللہ اور رحمت اللہ نےNA-4میں ایک بڑے شمولیتی جلسے میں اپنی پارٹی چھوڑ کر پاکستان مسلم لیگ (ن) میں شمولیت کا اعلان کردیا ۔ اس موقع پر پی ایم ایل (ن) کے صوبائی سیکرٹری انفارمیشن ناصر موسیٰ زئی نے ایک بڑے عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ NA-4 میں اُنکی پارٹی کے خدمات کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ۔ انھوں نے کہا کہ ہم حلقے کے منتخب نمائندے نہ ہونے کے باوجود بھی ہر شعبے میں NA-4کے لئے کام کر رہے ہیں اور اس علاقے میں بجلی اور گیس کے شعبے میں ترقیاتی منصوبوں کے جال بچھا دیئے ہیں۔ ناصر موسیٰ زئی نے مزید کہا کہ منتخب نمائندے NA-4کے عوام کی خدمت میں مکمل طور پر ناکام ہے یہی وجہ ہے کہ دوسرے پارٹیوں سے سیاسی ورکرز جوق درجوق پاکستان مسلم لیگ (ن) میں شامل ہورہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اگلا الیکشن پاکستان مسلم لیگ ن کا ہے اور عوام ہمیں بھاری اکثریت ست کامیاب کریگی۔اس موقع پر جہانگیر خان، حنیف اللہ اور رحمت اللہ نے بھی مسلم لیگ ن میں شمولیت کا اعلان کیا اور جلسے سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ NA-4 میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے عوامی خدمت کی بدولت حلقے میں مسائل دن بہ دن کم ہو رہے ہیں جس کی وجہ سے مسلم لیگ ن حلقے کی مقبول ترین جماعت بن چکی ہے۔


                                                                                                                                                                   چیئرمین ڈیڈک سوات فضل حکیم خان نے ضلع سوات کے ترقیاتی محکموں کے سربراہوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ ضلع بھر میں جاری ترقیاتی سکیموں پر کام کی رفتار تیز کریں اور اُن کی مقررہ وقت میں تکمیل کو یقینی بنائیں،خصوصاًسیدو شریف ہسپتال میں جاری تعمیر اتی کام 31دسمبر2017کو مکمل کیا جائے اور محکمہ صحت کو حوالہ کیا جائے۔وہ جمعرات کے روز اپنے دفتر میں ڈیڈک سوات کے اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔اجلاس میں ایس پی خان خیل ،اے سی بابوزئی شہاب محمد خان،تحصیل ناظم بابوزئی اکرام خان کے علاوہ محکمہ خزانہ،سی اینڈ ڈبلیوبلڈنگ و ہائے وے،ٹی ایم اے،آبنوشی ،آبپاشی اور دیگر ضلعی آفسران نے شرکت کی۔فضل حکیم خان نے اجلاس کو بتایا کہ صوبائی حکومت کی پالیسی روز روشن کی طرح واضح ہے جس کے تحت عوام کا پیسہ عوام کی ترقی اور خوشحالی پر ہی خرچ ہوتا ہے۔اس طرح کام کے معیار پر سودا بازی کی کوئی گنجائش نہیں ہوتی اور نہ ہی منصوبوں میں طوالت کی اجازت ہوتی ہے۔اب چونکہ تمام افسران اس پالیسی کو خوب جان چکے ہیں اور وہ اسی پالیسی کے تحت ہی کام کر تے ہیں لہذا ترقیاتی کاموں کے معائنہ کے دوران اب شکایات کا موقع کم ہی ملتا ہے۔انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے موئثرقانون سازی کے ذریعے ایک ایسے نظام کی بنیاد رکھ دی ہے جہاں وزیراعلیٰ سمیت کسی بھی وزیراورسرکاری عہدیدار کا احتساب ممکن ہوگیاہے جو نئے پاکستان کے قیام کی جانب ایک اہم سنگ میل ثابت ہوگا۔ضلع سوات میں کرپٹ عناصر کیلئے کوئی جگہ نہیں ہے افسران اور اہلکارخود کوعوام کا خادم سمجھ کر اُن    کے مسائل حل کریں اور ان کو شکایت کا موقع نہ دیں بصورت دیگر ضلع بدرکئے جائیں گے۔

سوات جمعیت علماء اسلام صوبہ خیبر پختونخوا کے امیر مولانا گل نصیب خان نے کہا ہے کہ ناچ گانوں کے ذریعے تبدیلی لانے والے عوام کو دھوکہ دے رہے ہیں ، تحریک انصاف نے خیبر پختونخوا کو ترقی دینے کے بجائے مزید پسماندہ کر دیا ہے ، ملک کو بحرانوں سے نکالنے کیلئے عوام کو جے یو آئی کا ساتھ دینا ہو گا ، عوام نے جے یو آئی پر توجہ مرکوز کر رکھی ہے مستقبل جے یو آئی کا ہے برمی مسلمانوں کی مکمل حمایت کرتے ہیں اور اس حوالے سے جے یو آئی کی پالیسی بالکل واضح اور دو ٹوک ہے عوام آئندہ الیکشن میں جمعیت علماء اسلام کا ساتھ دیں تاکہ ملک کو ترقی کی شاہراہ پر گامزن کیا جا سکے طاغوتی قوتوں کی راہ میں جے یو آئی ہی سب سے بڑی رکاؤٹ ہے ملک میں اسلام کا عادلانہ نظام نافذ کرنا جے یو آئی کا ہدف ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے مدین مورپنڈی میں شمولیتی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر جمعیت علماء اسلام کے مرکزی ڈپٹی جنرل سیکرٹری اعجاز خان ، سابق سنیٹر مولانا راحت حسین ، ضلعی امیر قاری محمود ، جنرل سیکرٹری اسحاق زاہد ، مولانا حجت اللہ ، مولانا رفیع اللہ قاسم ، مفتی کفایت اللہ ، مولانا علی رحمان ، پروفیسر ظاہر شاہ ، بخت زادہ اور نیروز میاں نے بھی خطاب کیا اس موقع پر پاکستان مسلم لیگ ن کے سرکردہ شخصیت الحاج نیروز میاں ، سید الطاف حسین ، سابق ڈی سی او ، میاں بخت زادہ ، پروفیسر ظاہر شاہ نے اپنے خاندانوں اور سیکڑوں ساتھیوں سمیت پاکستان مسلم لیگ ن کو خیر باد کہہ کر جمعیت علماء اسلام میں شمولیت کا اعلان کیا ۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین کا کہنا تھا کہ ہم اللہ تعالیٰ کی زمین پر اللہ کا نظام چاہتے ہیں عالم اسلام کی بقاء اور سربلندی کیلئے کوششیں جہاد سے کم نہیں انہوں نے کہا کہ اس شمولیتی جلسہ عام سے واضح ہو گیا ہے کہ آئندہ انتخابات میں جمعیت علماء اسلام سات صوبائی اور دو قومی اسمبلی کی سیٹیں جیت کر دکھائے گی انہوں نے کہا کہ بر ما کے مسلمانوں کو ظلم سے بچانے کیلئے محمد بن قاسم کی ضرورت ہے انہوں نے واضح کیا کہ خیبر پختونخوا کے عوام تحریک انصاف کی دوغلی پالیسی اور ناچ گانوں کے کلچر سے مایوس ہو چکے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ جمعیت علماء اسلام کے ہر جلسہ عام میں ہزاروں افراد جمعیت کے جھنڈے تلے جمع ہو کر مولانا فضل الرحمن کے اسلامی جدوجہد میں انکا ساتھ دینے کا عہد کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ ہماری کسی بھی سیاسی راہنما سے کوئی اختلاف نہیں اگر کوئی اختلاف ہے تو صرف اور صرف اسلامی نظام کے نفاذ پر ہے جمعیت علماء اسلام اس ملک میں اسلامی نظام کے نفاذ کی کوششیں کر رہی ہے اگر ملک میں جے یو آئی نہ ہوتی تو آج اس ملک میں کوئی مسجد اور مدرسہ محفوظ نہ ہوتا ہم حق اور باطل کی جنگ لڑ رہے ہیں آج دنیا بھر میں اللہ کا نام لینے والوں پر ظلم ہو رہا ہے ہم امریکہ کی غلامی کرنے والوں میں سے نہیں انہوں نے کہا کہ اُمت مسلمہ کو آج ایک جان کو ایک پلیٹ فارم پر متحد ہونا پڑے گا کفری قوتیں خود نیست و نابود ہو جائے گی شمولیتی جلسہ کے دوران کالام روڈ پر کام شروع کرنے ، جنگلات میں بوسیدہ درختوں پر مارکنگ کرنے ، گرڈ اسٹیشنوں کو تعمیر کرنے ، بجلی کی بوسیدہ لائنیں تبدیل کرنے ، بحرین پاور اسٹیشن سے سب  سے پہلے سوات کو بجلی دینے کی قراردادیں بھی منظور کی گئیں ۔ 

فیورٹ پوسٹ